Tera Naam - تیرا نام


عشق کی بیخدی سے کہاں جام اچھا ہے
دنیا کے ناموں میں فقط تیرا نام اچھا ہے

ہم تو مرتے بھی نہ تھے نہ جیتے تھے 
پوچھا جو تم نے تو کہا حال اچھا ہے 

چلتے ہوئے نہ سوچا کہ کانٹے ہونگے
توجو  ہمسفر تھا  سوچا خیال اچھا ہے 

Comments

Popular posts from this blog

Under shadows of guns - Eid in Rabwah

How I started writing

The Changing Face of Hypocrisy