Totay Khawab - ٹوٹے خواب


اے دل  اے دل 
خواب تمہارے  ٹوٹے ایسے 
ٹوٹا ہو  شیشہ  جیسے 

جوڑے کیسے ٹوٹے رشتے 
ہوگا  کیسے 
پوچھے  مجھ  سے  
روتے  روتے 
یہ دل  یہ دل 

پل میں جوڑا  پل میں توڑا
کیسا  بندھن 
کیسے  رشتے 
کیسے  وعدے 
ٹوٹے  تمہارے 
اے دل  اے دل

جیوں  کیسے  مروں   کیسے 
کوئی آس دلا دے 
پھر سے پریت لگا دے 
سجدہ  سجدہ  
مانگے  رب سے 
دھڑکن  دھڑکن 
یہ دل  یہ دل

Comments

Popular posts from this blog

Rohan - Part 1

Mediocrity The New Norm

Rohan - Part 2