میری سحر

جب  کچھ نہ تھا تب ملی امید سحر
خدا نے دی جیسے خود ہی نوید سحر

خوشی ملی جو برسوں  روٹھ گئی تھی
سکوں جیسے ملتا ہے دعائے وقت سحر

ان گنت غموں سے ٹوٹا پڑا تھا میں
بنی مرھم جیسی  وہ اک  نسیم  سحر

دعا بس یہی ہے میری رب رحیم سے
پر مسرت رہے تمہاری ہر گھڑی ہر سحر




Post a Comment

Popular posts from this blog

A look at the extremist mindset of Pakistan (The Maya Khan incident)

Outcasts - The Ahmadis of Pakistan

Feelings of an Ahmadi enduring endless Persecution

First job at MTA Pakistan

Rohan - Part 2

3 Days to Remember (The Last Jalsa Salana in Rabwah)

Rohan - Part 1

My Mother - Amtul Hafeez Begum

کچھ تلخ باتیں

Somber Eid